Bani Israel – Part 8

data-full-width-responsive="true">

بنی اسرائیل پارٹ 8

اہلِ کتاب (اسرائیلی) جانتے تھے کہ آخری عظیم پیغمبر (صلی اللہ علیہ والہ وسلم) کس سرزمین سے آئینگے۔ مدینہ کی سرزمین، پوری دنیا میں وہ واحد زمین نظر آئی انہیں جو ان نشانیوں سے مطابقت رکھتا تھا۔ اس لئے انہوں نے وہاں آباد ہونا شروع کیا۔

لیکن ہمارے نبی صلی اللہ علیہ والہ وسلم کا ظہور بنی اسرائیلیوں کی بجائے عربوں سے ہونا اس بات کو ثابت کر چکا تھا کہ امامت اب بنی اسرائیلیوں سے چھن چکی ہے۔ اب انہوں نے رسول صلی اللہ علیہ والہ وسلم کا بھی انکار کر دیا۔

اس انکار کے بعد اب انہوں نے اپنا مسیح دجال کو قرار دیا۔ کیونکہ وہ ایک ہے جو اپنے وقت میں پورے دنیا پر حکمرانی کرنے کی کوشش کرے گا اور اس کے پیروکار یہود ہونگے۔ ان کھلی نشانیوں اور دجال کا شیطانی پیروکار ہونے کے باوجود، یہود یعنی بنی اسرائیلی بجائے ڈرنے کے، اس حکومت کو اپنا سنہری خواب بنا بیٹھے۔ مگر سب یہود ایسے نہیں، یہ صرف وہ تھے جو حسد میں انتہا درجے تک پہنچ گئے۔ یہ لوگ اپنی شیطانی طاقتیں بڑھانے لگے، اور دجال کو اپنے خدا کا درجہ دینے لگے۔ جس کی سلطنت قائم کرنے کے لئے یہ پوری انسانیت کو برباد کر سکتے ہیں۔

ان کا پلان صرف ایک ہے۔۔۔۔ “دی نیو ورلڈ آرڈر“ ۔۔۔ یعنی فرعون والا بد ترین دور۔۔۔۔۔

جاری ہے۔۔۔

data-full-width-responsive="true">

Check Also

Hayrat Angaaz Report in Urdu

data-full-width-responsive="true"> data-full-width-responsive="true">