I Stopped Watching Movies, Then I watched A Movie by Mistake. How Can I Stop Watching Them?

 

Question:
I vowed that I would not watch movies, but I did not stipulate any particular type of movies. One year later I watched the movie that was not bad or indecent.
My question is: how can I stop committing this sin?.

 

Answer:

Praise be to Allaah.The ways in which you can give up watching movies: you can achieve that by means of several things that were mentioned by the scholars and educators, such as the following:

1.      Bearing in mind that Allah, may He be exalted, is always watching and that He knows what is secret and is even more hidden. One of the early generation was asked about what they did that help them to lower their gaze and refrain from looking at Haraam things. He said: By knowing that Allah sees you more quickly than you see what you are looking at.

2.     Righteous friends who will remind you if you forget and alert you if you are heedless. They are close friends who love one another for the sake of Allah and you are brought together in obedience to Allah, may He be exalted. Allah says (interpretation of the meaning): “Friends on that Day will be foes one to another, save those who kept their duty (to Allah)” [al-Zukhruf 43:67]. That is the good companion whom the Prophet (blessings and peace of Allah be upon him) likened to the bearer of musk. It was narrated that Abu Moosa al-Ash‘ari (may Allah be pleased with him) said: The Messenger of Allah (blessings and peace of Allah be upon him) said: “The likeness of a good companion and a bad companion is that of one who carries musk and one who works the bellows. With the carrier of musk, either he will give you some or you will buy some from him, or you will notice a good smell from him; as for the one who works the bellows, either he will burn your clothes or you will notice a bad smell from him.”

3.      Keeping yourself busy with things will benefit you in religious and worldly terms. You should have a daily wird that you recite; memorize the Book of Allah; study some books by the scholars or listen to them, and busy yourself with things that are beneficial and serve the people and society.

4.     Marriage, which is what the Prophet (blessings and peace of Allah be upon him) recommended to help lower their gaze and guard chastity, as he said: “O young men, whoever among you can afford it, let him get married, for it is more effective in lowering the gaze and guarding one’s chastity. And whoever cannot afford it, let him fast, for it will be a shield for him.” Narrated by al-Bukhaari (4779) and Muslim (1400).

5.     Always asking Allah to help you, guide you and purify your hearing and sight. The best thing that a person can do to rid himself of evil inclinations after taking the proper measures is to turn to his Lord and ask Him to help him with that, to make things easy for him and to purify his physical faculties.

We ask Allah to enable you to do that which He loves and that pleases Him.

And Allah knows best.

 

—————————————————————————————–

سوال: میں نے قسم کھائی تھی کہ میں فلمیں نہیں دیکھوں گی۔ لیکن میں نے کسی خاص قسم کی فلموں کو ذھن میں رکھ کر یہ عہد نہیں کیا تھا۔ ایک سال بعد میں نے ایک فلم دیکھی (حالانکہ یہ خراب فلم نہیں تھی)۔
لیکن مجھے پوچھنا ہے کہ میں اس گناہ (فلمیں دیکھنے) سے خود کو کیسے روکوں؟

جواب: الحمد للہ

فلموں کو دیکھنے سے کیسے روکا جائے، اس بارے میں بہت سے عالمین اور اعلی محققین نے بہت سی رائے دی ہیں۔

1- اپنے ذھن میں ہر لمحہ بٹھائے رکھیں کہ اللہ عزوجل ہمیشہ آپ کو دیکھ رہا ہے، اور وہ آپ کے راز، اور ہر وہ بات جو آپ چھپاتے ہیں سب سے واقف ہے۔ ایک شخص سے کسی نے پوچھا کہ آپ اپنی نظریں جھکائے رکھتے ہیں، اتنا کنٹرول آپ نے کیسے سیکھ لیا؟ انہوں نے فرمایا، ‘ اپنے ذھن میں یہ بٹھانے سے کہ اگر میں کسی نامحرم کو دیکھوں جتنی تیزی سے، اس سے کئی گنا تیزی سے میرا رب مجھے دیکھے گا‘۔

2۔ اچھے دوستوں کی صحبت رکھنے سے۔ جو آپ کو ہر لمحہ خبردار کریں جب آپ بھٹکنے یا بہکنے لگیں تو۔ یہ وہ دوست ہوتے ہیں جو ایک دوسرے سے قربت اور محبت صرف اور صرف اللہ کی رضا اور محبت حاصل کرنے کے لئے رکھتے ہیں۔ اللہ کریم سورہ سورة الزخرف میں فرماتے ہیں، ‘(جو آپس میں) دوست (ہیں) اس روز ایک دوسرے کے دشمن ہوں گے۔ مگر پرہیزگار (کہ باہم دوست ہی رہیں گے)‘ یہی اچھے دوستوں کو ہی ہمارے پیارے نبی صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے مشک کی خوشبو قرار دیا ہے۔

3۔ ایسی چیزوں میں خود کو مشغول رکھنا جو آپ کو دنیاوی اور اخروی دونوں لحاظ سے فائدہ دیں۔ آپ ہر روز ورد کرتے رہیں۔ اللہ کی کتاب (قران کریم) یاد کرنے کی طرف دھیان دیں۔ علمائے کرام کی کتابیں پڑھیں یا ان کے لیکچرز سنیں۔ اور خود کو ایسی چیزوں میں مصروف رکھیں جو آپ کے ساتھ ساتھ لوگوں کو بھی فائدہ دیں۔

4۔ نکاح کر لیں۔ کہ شادی وہ پاکیزہ رشتہ ہے جسے ہمارے نبی صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے پسند فرمایا اور اسے اپنی نظروں میں حیا پیدا کرنے کا سبب بھی قرار دیا۔

5۔ ہمیشہ اللہ رب العزت سے مدد مانگتے رہیں کہ وہ رب کریم آپ کی رہنمائی کرتا رہے، اور آپ کا دل اور دماغ پاک رکھے۔ سب سے بہترین راستہ یہ ہیکہ آدمی ہمیشہ اپنے رب سے مدد مانگتا رہے اور ہمیشہ ذھن میں رکھے کہ وہ اپنے اس چھوٹی سی دنیاوی غرض اور لذت کے لئے کس طرح اپنے محبوب اللہ کو ناراض کر سکتا ہے؟

ہماری اللہ سے دعا ہے کہ وہ آپ کو اس قابل بنائے کہ آپ وہ بہترین کام اور اوصاف اپنے اندر پیدا کریں جن سے اللہ آپ سے خوش ہو۔ آمین۔

 

 

 

 

Source : IslamQA

Translated and Edited By Content Editor of IslamicGathering

Check Also

Hayrat Angaaz Report in Urdu