Qasas ul Quran – Hazrat Nuh (Part 6)

حضرت نوح علیہ السلام ۔ پارٹ 6

 

اب 950 سال کا صبر اور غم نوح علیہ السلام پر چھانے لگا۔

‘اب نوح کو وحی کی گئی کہ جو ایمان لے آئے وہ لے آئے، اب ان میں سے کوئی ایمان لانے والا نہیں۔ پس ان کی حرکت پر غم نہ کر۔‘

ہود ۔ 36

نوح علیہ السلام کو اب قوم کی سرکشی کا یقین ہو گیا تو پکار اٹھے:

‘ اے رب! تو کافروں میں سے کسی کو بھی زمین پر باقی نہ چھوڑ۔ اگر تو ان کو یونہی چھوڑ دے گا تو یہ تیرے (نیک) بندوں کو بھی گمراہ کر دینگے۔ اور ان کی نسل بھی انہی کی طرح نافرمان پیدا ہوگی۔‘

نوح ۔ 27۔ 26

اب اللہ کا حکم آیا کہ:

‘اے نوح! تو ہماری حفاظت اور وحی کے مطابق کشتی تیار کر۔ اور اب مجھ سے ان ظالموں کے متعلق کچھ نہ کہنا۔ یہ بیشک غرق ہونے والے ہیں۔ وہ کشتی بنانے لگے۔ ان کی قوم کے جو سردار گزرتے تو ان کا مذاق اڑاتے۔ نوح کہتے اگر تم ہمارا مذاق اڑاتے ہو تو ہم بھی تم پر ایک دن ہنسیں گے جیسے تم ہم پر ہنستے ہو۔‘

ہود ۔ 38۔ 37

وہ نوح علیہ السلام کا مذاق اڑاتے کہ:

اے نوح! کل تک تو نبی تھے آج بڑھئی بن گئے؟

خشکی میں کشتی کس لئے؟

اور ان کے طنز، ہنسی اور مذاق جاری رہے، اپنے انجام سے بے خبر۔۔۔۔

جاری ہے۔۔۔۔

 

 

Click Here For Qasas ul Quran All Parts

Check Also

Hayrat Angaaz Report in Urdu