Qasas ul Quran – Hazrat Nuh (Part 7)

حضرت نوح علیہ السلام ۔ پارٹ 7

 

اب سفینہ نوح تیار ہوگیا۔ حکم ہوا کہ تم سارے مومننین اور ہر چرند پرند کے ایک ایک جوڑے سمیت سوار ہو جاؤ۔ جیسے ہی ایک (مخصوص) تندور ابلنے لگے سمجھو عذاب شروع۔

اب اللہ نے زمین اور آسمان سے اس قدر پانی برسایا کہ کوئی یقین نہیں کر سکا کہ صحرا میں اچانک سے سمندر؟

قومِ نوح بہت لمبے چوڑے تھے۔ اس وقت پہاڑ بھی بہت بڑے تھے۔ لیکن پانی کی موجیں ان سب سے زیادہ بڑی تھیں۔ سونامی ان کے آگے کچھ نہیں تھا۔۔۔

اب کشتی چلنے لگی اور باقی قوم پانی میں ڈوبنے لگی۔ نوح علیہ السلام کی بیوی اور چھوٹا بیٹا کنعان کافر ہی رہے۔

‘وہ کشتی انہیں پہاڑوں جیسے موجوں میں لے کے جا رہی تھی۔ اور نوح نے اپنے بیٹے کو جو ایک کنارے پر تھا پکارا، کہ اے میرے پیارے بچے! ہمارے ساتھ سوار ہو جا اور کافروں میں شامل نہ رہ۔
اس نے جواب دیا کہ میں تو کسی بڑے پہاڑ کی طرف پناہ لے لوں گا۔ جو مجھے پانی سے بچا لے گا۔ نوح بولے، آج اللہ کے امر سے بچنے والا کوئی نہیں۔ صرف وہی بچیں گے جن پر اللہ کا رحم ہوا۔ اسی وقت دونوں کے درمیان موج حائل ہوگئی اور وہ ڈوبنے والوں میں سے ہو گیا۔ ‘

ہود ۔ 43 ۔ 42

جاری ہے۔۔۔

 

Click Here For Qasas ul Quran All Parts

Check Also

Hayrat Angaaz Report in Urdu