Qasas ul Quran – Hazrat Yusuf (LAST PART)

data-full-width-responsive="true">

حضرت یوسف علیہ السلام ۔ آخری حصہ

 

پھر جب بشارت دینے والا آ پہنچا تو اس نے کرتا یعقوب علیہ السلام کے چہرے پر ڈال دیا۔ پس ان کی آنکھیں روشن ہو گئیں۔ بولے، کیا میں نہ کہتا تھا تم سے کہ میں اللہ کی جانب سے وہ جانتا ہوں جو تم نہیں جانتے۔

سورہ یوسف ۔ 96

بیٹوں کے لئے یہ وقت بہت مشکل تھا۔ بولے، ابا! آپ اللہ کے حضور ہماری دعائے مغفرت فرمائیں۔ کہ ہم ہی خطا کار ہیں۔

غرضیکہ یعقوب علیہ السلام اپنے پورے عیال کو لے کر مصر روانہ ہوگئے۔ یوسف علیہ السلام نے پرجوش استقبال کیا۔ سب شاہی محل میں موجود تھے اور جب یوسف علیہ السلام تخت پر جلوہ افروز ہوئے تو سب سجدہ تعظیم میں گر پڑے، اور ان کا وہ خواب جو انہوں نےکئی سالوں پہلے دیکھا تھا، پورا ہو گیا۔۔۔

تورات کے مطابق اس وقت کے بڑے بادشاہ نے ہی یوسف علیہ السلام سے کہا تھا کہ اپنے خاندان کو مصر میں آباد کرو۔ میں ان کو بہت عمدہ زمین دونگا اور ان کی ہر طرح سے عزت کی جائے گی۔

لہٰذا سب وہیں آکر آباد ہوگئے۔ یوسف علیہ السلام تقریباً 110 سال حیات رہے۔ اور وہیں انتقال فرما گئے۔ لیکن وصیت کی کہ مجھے مصر میں نہیں بلکہ جب فلسطین جاؤ تو وہیں دفنانا۔

جب ان کا انتقال ہوا تو ان کو تابوت میں حنوط (ممی) کر کے تابوت میں محفوظ رکھ دیا گیا۔ پھر جب موسی علیہ السلام کا دور شروع ہوا، اور بنی اسرائیل مصر سے نکلنے لگے تو وہ تابوت بھی ساتھ ہی فلسطین لے گئے۔

یوں یوسف علیہ السلام کا یہ قصہ بھی اختتام پذیر ہوا۔

جو بھی پیغمبر آیا اس نے اپنی قوم کو آخری نبی (صلی اللہ علیہ والہ وسلم) کی بشارت دی۔ یہ اور بات کہ قوم کے افراد بعد میں اپنے نفس کے ہاتھوں اپنا ایمان بیچ بیٹھ جاتے۔ اور ایمان نہ لاتے، سوائے ان میں سے کچھ لوگوں کے۔۔۔

ختم شد۔۔۔

 

 

 

Click Here For Qasas ul Quran All Parts

data-full-width-responsive="true">

Check Also

Hayrat Angaaz Report in Urdu

data-full-width-responsive="true"> data-full-width-responsive="true">