Qasas ul Quran – Hazrat Yusuf (Part 23)

data-full-width-responsive="true">

حضرت یوسف علیہ السلام ۔ پارٹ 23

 

برادران یوسف بوکھلا گئے اور بادشاہ کے لب اور لہجے پر غور کر کے یک دم بولے:

کیا تم واقعی یوسف ہو؟ ہاں! میں ہی یوسف ہوں اور یہ (بن یامین) میرا سگا بھائی۔ اللہ نے ہم پر احسان کیا اور جو شخص بھی برائیوں سے بچے اور ثابت قدم رہے تو اللہ نیک لوگوں کا اجر ضائع نہیں کرتا۔

سورہ یوسف ۔ 90

اب بھائیوں کے پاس ندامت کے سوا کیا تھا۔ جان گئے کہ جس کو کل کنعان کے کنویں میں پھینک کر آگئے تھے، وہ آج کی سپر پاور مصر کا بادشاہ ہے۔ اللہ اکبر۔۔۔۔ !!!!!

بولے:

باللہ اس میں شک نہیں کہ اللہ نے تجھ کو ہم پر برتری بخشی اور بلاشبہ ہم سراسر قصوروار تھے۔

سورہ یوسف ۔ 91

یوسف علیہ السلام اپنے سوتیلے بھائیوں کی ندامت دیکھ کر فرمائے :

آج کے دن میری جانب سے تم پر کوئی سرزنش نہیں۔ اللہ تمہارا قصور بخشےاور وہ سب سے بڑھ کر رحیم ہے۔

سورہ یوسف ۔ 92

اب تم کنعان واپس جاؤ میرا کرتا لیکر اور والد کی آنکھوں پر ڈال دینا۔ انشاء اللہ ان کی آنکھیں روشن ہو جائینگی۔ اور تمام خاندان کو مصر لے آؤ۔ یہاں حکم کی تعمیل شروع ہوئی وہاں یعقوب علیہ السلام وحی الٰہی کی بنا پر اپنے اہل سے فرمانے لگے:

اگر تم یہ نہ کہو کہ بڑھاپے میں اس کی عقل ماری گئی ہے تو میں یقین سے کہہ سکتا ہوں کہ مجھے یوسف کی مہک آرہی ہے۔

سب کہنے لگے کہ آپ تو بس اسی غم میں رہینگے۔۔۔۔۔۔

جاری ہے۔۔۔۔

 

 

 

Click Here For Qasas ul Quran All Parts

data-full-width-responsive="true">

Check Also

Hayrat Angaaz Report in Urdu

data-full-width-responsive="true"> data-full-width-responsive="true">