Women Living / Travelling Alone

data-full-width-responsive="true">

 (اردو ترجمہ نیچے دیکھیں)

 Question:

Can women live alone? If they can live alone, why can’t they travel alone?

Answer:  Praise be to Allah. 
 
 A woman may live alone subject to the condition that she is trustworthy and is not a woman of dubious character. With regard to a woman travelling without a mahram. 
 
This is completely wise, because travel involves hardship and exhaustion, and because of her weakness a woman needs someone to help her and stay by her side. Things may happen to her that may cause her to lose control when her mahram is not with her. This is well known nowadays when there are so many accidents involving cars and other means of transportation.  Moreover, if a woman travels alone, that exposes her to temptation and men may make approach her, especially when there is a great deal of corruption. Someone may sit near her, as he does not fear Allah, and he may tempt her to do something haraam. If we assume that a woman is travelling alone in her car, she is exposed to other dangers, such as her car breaking down, or evil people ganging up on her, etc.  This makes its clear that Islam is the first of all systems to take care of women, protect their honour, respect them and regard them as precious pearls that must be protected from evil. 

 It is not correct to compare travel to a woman staying alone in a house in her own land, because there are more dangers in the place that a woman travels to. If a woman is in her own town, if anything happens to her or she needs someone to help her, she will find someone to help her. The fear of evil people attacking her is less when she is in her own town and her own house than when she is travelling. 

====================================================

سوال : کیا عورت اکیلی رہ سکتی ہے ؟ اگر وہ اکیلی رہ سکتی ہے تو اسے اکیلے سفر کرنے کی اجازت کیوں نہیں ہے ؟

جواب : الحمداللہ

ایک عورت اس صورت میں اکیلی رہ سکتی ہے اگر اس کا کردار قابل بھروسہ ہو اور وہ بے کردار نہ ہو۔ ایک ایسی عورت جو کہ اپنے محرم کے بغیر سفر کر رہی ہو، تو اسے واضح طور پر منع کیا گیا ہے۔

یہ عقل کی بات ہے کہ سفر میں بہت تھکاوٹ ہوتی ہے اور مشکلات آتی ہیں۔اپنی کمزوری کی وجہ سے ایک عورت کو سفر میں محرم کی ضرورت رہتی ہے۔ سفر میں اگر اس کا محرم ساتھ نہ ہو تو کوئی بھی واقع پیش آسکتا ہے۔ آج کل کے حالات کے پیش نظر یہ بہت ہی واضح ہے کہ سفر میں بہت زیادہ حادثات ہو جاتے ہیں۔

مزید یہ ہے کہ اگر عورت اکیلی سفر کرتی ہے تو مرد اس کی طرف متوجہ ہو جاتے ہیں اور اس تک پہنچنے کی کوشش کرتے ہیں، کوئی اس کے قریب آ کر بیٹھ جاتا ہے جسے اللہ کا خوف ہی نہیں ہوتا۔ اور وہ مرد اس عورت کو کچھ غلط کرنے پر اکساتا ہے جو کہ اسلام میں حرام ہے۔

اگر ہم فرض کریں کہ ایک عورت اکیلی کار میں سفر کر رہی ہے، تو اس کی دوسری حادثات کا بھی شکار ہو سکتی ہے اور شیطان صفت لوگ بھی اس پر حملہ کر سکتے ہیں۔

یہ بات بہت ہی واضح ہے کہ اسلام عورت کا بہت خیال رکھتا ہے، اسے بہت تحفظ فراہم کرتا ہے، اور اس کو بہت عزت دیتا دیتا ہے۔ اور اسے ایک موتی کی طرح قرار دیتا ہے جسے شیطانیت سے بچایا جا سکے۔

ایک عورت کا اکیلے اپنے گھر میں رہنا اور ایک عورت کا اکیلےسفر کرنا دونوں الگ الگ باتیں ہیں۔ کیوں کہ جو عورت اکیلے سفر کے لئے نکلتی ہے وہ بہت غیر محفوظ ہوتی ہے۔ اور ایک عورت اگر اپنے گھر میں اکیلی رہتی ہے تو کچھ بھی ہو سکتا ہے، اس صورت میں اسے کسی کی مدد کی ضرورت بھی پڑ سکتی ہے۔ اگر وہ اپنے گھر میں محرم کے ساتھ رہتی ہے تو  برے لوگوں کے حملے سے بچ سکتی ہے۔

  
Source : Islamicislamic
Translated and Edited By Content Editor of IslamicGathering

data-full-width-responsive="true">

Check Also

Hayrat Angaaz Report in Urdu

data-full-width-responsive="true"> data-full-width-responsive="true">